خرد کہتی ہے اس کو اجنبی کر لو

خرد کہتی ہے اس کو اجنبی کر لو
جنوں کہتا ہے اس کی بندگی کر لو

دیے تو بجھ گئے پر فکر کیسی ہے
میری آنکھیں جلا کر روشنی کر لو

ہمیشہ ہی دکھاوے کو جھکے ہو تم
کبھی تو دل سے اسکی بندگی کر لو

تمہاری شاعری توہینِ اردو ہے
ذرا اوزان میں تم شاعری کر لو

محبت میں ہوا جو حال مجنوں کا
مری حالت بھی تم کچھ ویسی ہی کر لو

سنا ہے تم وفا میں خوب ماہر ہو
فہیمَ اقبال سے بھی تھوڑی سی کر لو

اننت ناگ کشمیر

Comments

Popular posts from this blog

The Lost Friend

Acrostic Poem Based On All Districts Of Kashmir By Perveiz Ali

Midnight Hour- A Poem By Shujaat Hussain.